Shop Grocery (USA) | Shop Henna | Shop Spices | Beauty Shop | Join | Sign In | Submit Recipe

New & Improved Search Helps You Find Even More Recipes & Videos!


Articles >> Food Fact articles > Get to Know Mango The King of Fruits آم پھلوں کا بادشاہ

Get to Know Mango The King of Fruits آم پھلوں کا بادشاہ

Get to Know Mango The King of Fruits آم پھلوں کا بادشاہ
The mango is commonly referred to as the king of fruit. This is because of its fine taste, color, beauty and good qualities. It has nutritive value, attractive fragrance and good shape. For further information review this article.
Viewed: 11038
Source:  Muhammad Asif
2 Ratings
5 out of 5 stars
 Rate It

  • آم پھلوں کا بادشاہ (Mango King of Fruit)

  •  

  • آم کا شمار برصغیر کے بہترین پھلوں میں ہوتا ہے، اس لیے یہ پھلوں کا بادشاہ کہلاتا ہے۔ اسے برصغیر کا بچہ بچہ جانتا ہے۔ آم اپنے ذائقے، تاثیر، رنگ اور صحت بخشی کے لحاظ سے تمام پھلوں سے منفرد ہے اور چونکہ خوب کاشت ہوتا ہے، اس لیے یہی سستا اور سہل الحصول بھی ہے۔ اس کی سینکڑوں اقسام ہیں۔ برصغیر کو آم کا گھر بھی کہتے ہیں۔ فرانسیسی مورخ ڈی کنڈوے کے مطابق برصغیر میں آم چار ہزار سال قبل بھی کاشت کیا جاتا تھا۔ آج کل جنوبی ایشیا کے کئی ممالک میں بھی بڑے پیمانے پر اِسے کاشت (implant) کیا جاتا ہے۔

  •  

  • ویسے تو آم کی متعدد اقسام ہیں جن کا ذکر آگے چل کر آئے گا تاہم دو قسمیں عام ہیں۔ تخمی اور قلمی، کچا آم جس میں گُٹھلی نہیں ہوتی، کیری (kerry) کہلاتا ہے اور اس کا ذائقہ تُرش ہوتا ہے۔ البتہ پکا ہوا آم شیریں اور کبھی کھٹا میٹھا ہوتا ہے۔ پکے ہوئے تخمی آم کا رس چُوسا جاتا ہے اور قلمی کو تراش کر کھایا جاتا ہے۔ آم قلمی ہو یا تخمی ہر صورت میں پکا ہوا لینا چاہیے۔ یہ رسیلا ہونے کی وجہ سے پیٹ میں گرانی پیدا نہیں کرتا اور جلد جزوبدن ہوتا ہے۔ پکا ہوا رسیلا میٹھا آم اپنی تاثیر کے لحاظ سے گرم خشک ہوتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ آم کے استعمال کے بعد کچی لسی پینے کا مشورہ دیا جاتا ہے۔ اس طرح آم کی گرمی اور خشکی جاتی رہتی ہے۔ جو لوگ کچی لسی (دودھ میں پانی ملا ہوا) استعمال نہیں کرتے اُن کے منہ میں عام طور چھالے ہو جانے یا جسم پر پھوڑے پھنسیاں نکل آنے کی شکایت ہوجاتی ہے۔ آم کے بعد کچی لسی استعمال کرنے سے وزن بھی بڑھتا ہے اور تازگی آتی ہے۔ معدے، مثانے اور گردوں کو طاقت پہنچتی ہے۔ آم کا استعمال اعضائے رئیسہ دل، دماغ اور جگر کے لیے مُفید ہے۔ آم میں نشاستے دار اجزا ہوتے ہیں جن سے جسم موٹا ہوتا ہے۔ اپنے قبض کُشا اثرات کے باعث اجابت بافراغت ہوتی ہے۔ اپنی مصفی خون تاثیر کے سبب چہرے کی رنگت کو نکھارتا ہے۔ ماہرین طب کی تحقیقات سے ثابت ہوتا ہے کہ آم تمام پھلوں میں سے زیادہ خصوصیات کا حامِل ہے اور اس میں حیاتین "الف" اور حیاتین "ج" تمام پھلوں سے زیادہ ہوتی ہے، کچا آم بھی اپنے اندر بے شمار غذائی و دوائی اثرات رکھتا ہے۔ اس کے استعمال سے بھوک لگتی ہے اور صفرا کم ہوتا ہے۔ موسمی تقاضوں کو پورا کرتے ہوئے لو کے اثرات سے بچاتا ہے البتہ ایسے لوگ جن کو نزلہ، زُکام اور کھانسی ہو ان کو یہ ہرگز استعمال نہیں کرنا چاہیے۔ آم تمام عُمر کے لوگوں کے لیے یکساں مُفید ہے۔ جو بچے لاغر اور کمزور ہوں اُن کیلئے تو عُمدہ قدرتی ٹانک ہے۔ اسے حاملہ عورتوں (pregnant women) کو استعمال کرنا چاہیے، یوں بچے خوبصورت ہوں گے۔ جو مائیں اپنے بچوں کو دودھ پلاتی ہیں، اگر آم استعمال کریں تو دودھ بڑھ جاتا ہے۔ یہ خوش ذائقہ پھل نہ صرف خون پیدا کرنے والا قدرتی ٹانک ہے بلکہ گوشت بھی بناتا ہے اور نشاستائی اجزا کے علاوہ فاسفورس، کیلشیم ، فولاد، پوٹاشیم اور گلوکوز بھی رکھتا ہے۔ اسی لیے دِل، دماغ اور جگر کے ساتھ ساتھ سینے اور پھیپھڑوں (lung) کے لیے بھی مُفید ہے البتہ آم کا استعمال خالی پیٹ نہیں کرنا چاہیے۔ بعض لوگ آم کھانے کے بعد گرانی محسوس کرتے ہیں اور طبیعت بوجھل ہوجاتی ہے۔ انہیں آم کے بعد جامن کے چند دانے استعمال کرنے چاہئیں، جامن آم کا مصلح ہے۔

  •  

  • آم کی مختلف اقسام (Different Kinds of Mango)

  •  

  • یُوں تو آم کی بے شمار اقسام سامنے آچکی ہیں مگر پاکستان میں بکثرت پیدا ہونے والی اقسام درج ذیل ہیں۔

  •  

  • دُسہری (Dasheri)

  • اِس کی شکل لمبوتری، چِھلکا خوبانی کی رنگت جیسا باریک اور گودے کے ساتھ چِمٹا ہوتا ہے۔ گودا گہرا زرد، نرم، ذائقےدار اور شیریں ہوتا ہے۔

  •  

  • چونسا (Chaunsa)

  • یہ آم قدرے لمبا، چِھلکا درمیانی موٹائی والا مُلائم اور رنگت پیلی ہوتی ہے۔ اس کا گودا گہرا زرد، نہایت خوشبو دار اور شیریں ہوتا ہے۔ اِس کی گُٹھلی پتلی لمبوتری، سائز بڑا اور ریشہ کم ہوتا ہے۔ اس کی ابتدا ملیح آباد (بھارت) کے قریبی قصبہ"چونسا" سے ہوئی۔

  •  

  • انور رٹول (Anwar Ratool)

  • اِس کی شکل ہیضہ نُما ہوتی ہے اور سائز درمیانہ ہوتا ہے۔ چِھلکا درمیانہ، چِکنا اور سبزی مائل زرد ہوتا ہے۔ گودا بے ریشہ، ٹھوس، سُرخی مائل زرد، نہایت شیریں، خوشبودار اور رَس درمیانہ ہوتا ہے۔ اس کی گُٹھلی درمیانی، بیضوی اور نرم، ریشے سے ڈھکی ہوتی ہے۔ اس قسم کی ابتدا میرٹھ (بھارت) کے قریب قصبہ"رٹول" سے ہوئی۔

  •  

  • لنگڑا (Langra)

  • یہ آم بیضوی لمبوترا ہوتا ہے۔ اس کا چِھلکا چِکنا، بے حد پتلا اور نفیس گودے کے ساتھ چِمٹا ہوتا ہے۔ گودا سُرخی مائل زرد، مُلائم، شیریں، رَس دار ہوتا ہے۔

  •  

  • اَلماس (Almas)

  • اِس کی شکل گول بیضوی ہوتی ہے اور سائز درمیانہ، چِھلکا زردی مائل سُرخ، گودا خوبانی کے رنگ جیسا مُلائم، شیریں اور ریشہ برائے نام ہوتا ہے۔

  •  

  • فجری (Fajri)

  • یہ آم بیضوی لمبوترا ہوتا ہے۔ فجری کا چھلکا زردی مائل، سطح برائے نام کُھردری، چِھلکا مُوٹا اور نفیس گودے کے ساتھ لگا ہوتا ہے۔ گودا زردی مائل، سُرخ، خوش ذائقہ، رَس دار اور ریشہ برائے نام ہوتا ہے۔ اِس کی گٹھلی لمبوتری موٹی اور ریشے دار ہوتی ہے۔

  •  

  • سِندھڑی (Sindhri)

  • آم بیضوی اور لمبوترا ہوتا ہے۔ اِس کا سائز بڑا، چِھلکا زرد، چکنا باریک گودے کیساتھ چِمٹا ہوتا ہے۔  گودا شیریں، رس دار اور گُٹھلی  لمبی اور موٹی ہوتی ہے۔ اصل میں مدراس کا آم ہے۔

  •  

  • گولا (Gola)

  • یہ شکل میں گُول ہوتا ہے۔ سائز درمیانہ، چِھلکا گہرا نارنجی (orange) اور پتلا ہوتا ہے۔ گودا پیلا ہلکا ریشے دار اور رسیلا ہوتا ہے۔ گُٹھلی بڑی ہوتی ہے۔

  •  

  • مالدا (Malda)

  • یہ آم سائز میں بہت بڑا ہوتا ہے، مگر گُٹھلی انتہائی چھوٹی ہوتی ہے۔

  •  

  • نیلم (Neelum)

  • اس آم کا سائز درمیانہ اور چِھلکا درمیانہ، موٹا اور پیلے رنگ کا چمکتا ہوا ہوتا ہے۔

  •  

  • سہارنی (Saharni)

  • سائز درمیانہ اور ذائقہ قدرے میٹھا ہوتا ہے۔

  •  

  • دوا کے طور پر اِستعمال

  •  

  • تمام پھل موسمی تقاضے پورا کرنے کی صلاحیتوں سے مالا مال ہیں۔ چونکہ آم موسم گرما کا پھل (summer season fruit) ہے اور موسم گرما میں دھوپ میں باہر نکلنے سے لو لگ جاتی ہے، لو لگنے کی صورت میں شدید بخار (fever) ہو جاتا ہے اس لیے لو کے اثر کو ختم کرنے کے لیے کچا آم گرم راکھ میں دبا دیں۔ نرم ہونے پر نکال لیں۔ اِس کا رَس لے کر ٹھنڈے پانی میں چینی کے ساتھ مِلا کر اِستعمال کریں۔ لو لگنے کی صورت میں تریاق کا کام دے گا۔ آم کے پتے، چھال، گُوند، پھل اور تخم سب دوا کے طور پر اِستعمال ہوتے ہیں۔ آم کے پرانے اچار کا تیل (pickle oil) گنج کے مقام پر لگانے سے بالچر کو فائدہ ہوگا۔ آم کے درخت (mango tree) کی پتلی ڈالی کی لکڑی سے روزانہ مسواک کرنے سے مُنہ کی بدہو (smell) جاتی رہے گی۔ خُشک آم کے بور کا سفوف روزانہ نہار منہ چینی کے ساتھ اِستعمال کرنا مرض جریان میں مُفید ہے۔ جِن لوگوں کو پیشاب رُکنے کی شکایت ہو، آم کی جڑ (mango root) کا چِھلکا برگ شیشم دس دس گرام ایک کلو پانی میں جوش دیں۔ جب پانی تیسرا حصہ رہ جائے تو ٹھنڈا کرکے چینی مِلا کر پی لیں۔ پیشاب کُھل کر آئے گا۔ ذیابیطس کے مَرض میں آم کے پتے جو خود بخود جھڑ کر گِر جائیں، سائے میں خُشک کرکے سفوف بنالیں۔ صُبح و شام دو دو گرام پانی سے اِستعمال کرنے سے چند دِنوں میں فائدہ ہوتا ہے۔ نکسیر کی صورت میں آم کے پھولوں کو سائے میں خُشک کر کے سفوف بنالیں اور بطور نسوار ناک میں لینے سے خُون بند ہو جاتا ہے۔

  •  

  • جن لوگوں کے بال سُفید ہوں، آم کے پتے اور شاخیں خُشک کر کے سفوف بنا لیں۔ روزانہ تین گرام یہ سفوف اِستعمال کیا کریں۔ کھانسی، دَمہ اور سِینے کے امراض میں مُبتلا لوگ آم کے نرم تازہ پتوں کا جوشاندہ، ارنڈی کے درخت (castor tree) کی چھال، سیاہ زیرے کے سفوف کے ساتھ اِستعمال کریں۔ آم کی چھال قابض ہوتی ہے اور اندرونی جِھلیوں پر نُمایاں اثر کرتی ہے، اس لیے سیلان الرحم (لیکوریا)، آنتوں اور رحم کی ریزش، پیچش، خُونی بواسیر کے لیے بہترین دوا خیال کی جاتی ہے۔ اِن امراض میں آم کے درخت کی چھال کا سفوف یا تازہ چھال کا رَس نکال کر اسے انڈے کی سفیدی یا گوند کے ساتھ دیا جاتا ہے۔ کیری کے چِھلکے کو گھی میں تَل کر شکر مِلا کر کھانے سے کثرتِ حیض میں فائدہ ہوتا ہے۔ یہ چِھلکا مقوی اور قابض ہوتا ہے۔ آم کی گُٹھلی کی گری قابض ہوتی ہے۔ چونکہ اس میں بکثرت گیلک ایسڈ (gallic acid) ہوتا ہے، اِس لیے پُرانی پیچش، اِسہال، بواسیر اور لیکوریا میں مُفید ہے۔ پیچش میں آنوؤں کو رُوکنے کے لیے گری کا سفوف دہی کے ساتھ دیا جاتا ہے۔ نکسیر بند کرنے لیے گری کا رَس ناک میں ٹپکایا جاتا ہے۔

More related articles to Get to Know Mango The King of Fruits آم پھلوں کا بادشاہ:

  • Thanks for reading our artilcle about "Get to Know Mango The King of Fruits آم پھلوں کا بادشاہ" filed under Food Fact articles. one of thousands of originally written Articles published exclusively at khanaPakana.com.

Tried out this recipe? Let us know how you liked it?

Pleasebe judicious and courteous in selecting your words.

Name:
Email:

 
Submit your comments

Comments posted by users for Get to Know Mango The King of Fruits آم پھلوں کا بادشاہ

Featured Brands


Payment Methods
Secure Online Shopping